مصنف

میں احسان اللہ کیانی آپ کو اپنی ویب سائٹ پر خوش آمدید کہتا ہوں۔

 

مجھے بڑی خوشی ہوئی کہ آپ یہاں تشریف لائے، سب سے پہلے میں آپ کو اپنے بارے میں کچھ بتانا چاہتا ہوں۔

 

 ابتدائی حالات:

 میں اٹھارہ سال تک ایک عام سا لڑکا تھا، ویسے ہی زندگی گزار رہا تھا،جیسے ہمارے ملک کے لڑکے گزارتے ہیں۔

 

پھر اللہ تعالی نے مجھ پر کرم کیا اور میرا دل اسلام کی طرف مائل کر دیا،مجھے قرآن کریم سیکھنے کا شوق عطا کیا

 

میں نے اپنی زندگی کے کئی سال علم دین سیکھنے میں خرچ کیے۔

 

میں نے عربی زبان سیکھی،قرآن اور علوم قرآن کو سیکھا، حدیث اور اصول حدیث کی کتب پڑھیں

 

فقہ اور اصول فقہ کو سمجھا اور اس کے ساتھ ساتھ باقی مروجہ علوم و فنون کو حاصل کیا۔

 

میں نے مدرسے میں داخلہ سے لے کر دورہ حدیث تک کی اپنی مکمل کہانی کو لکھا ہے آپ اسے یہاں کلک کرکے پڑھ سکتے ہیں ۔

 

مدرسے کی تدریس:

ان علوم کی تحصیل کے بعد میں نے ایک جامعہ میں پڑھانا شروع کر دیا اگرچہ مجھے معلوم تھا کہ تدریس کی فیلڈ میں کوئی پیسہ نہیں ہے

 

اس کے باوجود میں نے دو سال تک یہ علوم پڑھائے، میری تنخواہ اس وقت صرف دس ہزار روپے تھی

 

لیکن میں پھر بھی بالکل راضی اور مطمئن تھا کیونکہ میں جانتا تھا میری آخرت سنور رہی ہے

 

پھر ایک دن اچانک وہ ہوا جس نے میری زندگی کا رخ ہی موڑ دیا،مجھ سے میری زندگی کا مقصد ہی چھین لیا اور مجھے بلاوجہ مدرسے سے نکال دیا گیا۔

 

جب میں مدرسے میں استاد تھا اس وقت میں نے ایک تحریر لکھی تھی ،آپ کو  اس تحریر سے میری کیفیات کا اندازہ ہو جائے گا ۔تحریر پڑھنے کیلئے یہاں کلک کریں

 

احسان اللہ کیانی اور فیکٹری میں ملازمت:

یہ غم انگیز سانحہ جب پیش آیا تو شعبان کا مہینہ تھا ،رمضان کی آمد آمد تھی،یہ وقت میرے لیے بہت مشکل تھا،میں ان دنوں کو کبھی نہیں بھول سکتا۔

 

میں شادی شدہ تھا،میرے ذمے میرے اہل خانہ کی کفالت تھی،اس لیے میں ایک فیکٹری میں چلا گیا اور وہاں ملازمت شروع کر دی۔

 

یہ سخت مشکل کام تھا،یہاں بہت سے مسائل تھے،چھ سے آٹھ ماہ بعد تو میں اپنی زندگی سے بیزارہوگیا تھا

 

کیونکہ میرا دین برباد ہو چکا تھا،نمازوں کی عادت ختم ہو چکی تھی، نیکی و تقوی رخصت ہو گیا تھا،میں فاسق و فاجر شخص بن چکا تھا۔

 

میرا ضمیر ہر وقت مجھےملامت کرتا رہتا تھا اور مجھ سے کہتا تھا تو کہاں آگیا ہے 

 

کیا تو اس لیے عالم بنا تھا 

 

خدا گواہ ہے میرا شوق تو تھا کہ میں اسلامی علوم کا ایک معلم بنوں اور دنیا کو اسلام کی تعلیم دوں

 

لیکن مجھے قسمت نے کسی دوسرے میدان میں اتار دیا تھا،میں انتہائی پریشانی کے عالم میں وقت گزارتا رہا۔

 

احسان اللہ کیانی نے مدرسہ بنانے کا ارادہ کیوں ترک کر دیا:

اس دوران میں  سوچتا رہا مجھے کیا کرنا چاہیے

 

پھر اپنا مدرسہ بنانے کا ارادہ کیا کچھ لوگوں سے بات چیت کی تو معلوم ہوا کہ مدرسے میں تو آپ معاونین کے محتاج ہوتے ہیں اور آپ کو ان کی ہر جائز اور ناجائز بات ماننی پڑتی ہے۔

 

کوئی بھی معاون ایسا نہیں ہوتا جو آپ کو خود مختار ہونے کا موقع دے

 

وہ ہمیشہ آپ کو اپنا محتاج رکھنا چاہتا ہے،میرے ضمیر نے یہ گوارہ نہیں کیا اور میں نے اپنا مدرسہ بنانے کا ارادہ ترک کر دیا۔

 

احسان اللہ کیانی کا یوٹیوب چینل:

پھر میں نے احسان اللہ کیانی کے نام سے ایک  یوٹیوب چینل بنالیا اور اس پر مختلف چیزیں سکھانا شروع کر دیں

لیکن

یہاں بھی وہ سب کچھ نہیں ہو پا رہا تھا ،جو میں چاہتا تھا کیونکہ یوٹیوب کا مزاج ہی کچھ اور ہے

 

یوٹیوب چینل کی مشکلات:

وہاں ٹرینڈنگ ٹاپکس ہی چلتے ہیں، وہاں مسالے دار وڈیوز ہی اوپر جاتی ہیں

 

وہاں تھم میل جس قدر جھوٹ پر مبنی ہو اسی حساب سے وڈیوز کے ویوز آتے ہیں

 

پھر اس کے ساتھ ساتھ یہ بھی حقیقت ہے کہ

 

وڈیوز بنانا بہت مشکل کام ہے ،پہلے وڈیو کیلئے مواد جمع کرنا پڑتا ہے پھر اس کو کئی بار دہرانا پڑتا ہے

 

تاکہ جملوں میں روانی آجائے پھر اسے روانی کے ساتھ کیمرے کے سامنے بولنا پڑتا ہے

 

پھر گھنٹے لگا کر اس کو ایڈیٹ کرنا پڑتا ہے اور اسے اپ لوڈ کرنا بھی ایک بڑی مصیبت ہے

 

پھر اس دوران آپ لیپ ٹاپ پر کوئی دوسرا کام بھی نہیں کر سکتے

 

پھر ایک مسئلہ یہ بھی ہے کہ جب آپ وڈیو بنا رہے ہوتے ہیں تو ہر طرف خاموشی ہونی چاہیے

 

روشنی اور لائٹس کا خاص انتظام ہونا چاہیے، آپ کی کپڑے عمدہ اور صاف ستھرے ہونے چاہییں

 

اسی طرح بہت سے لوازمات ہیں جو یوٹیوب کیلئے ضروری ہیں۔

 

اس لیے میں نے یوٹیوب کے بجائے ایک ویب سائٹ بنانے کا فیصلہ کیا ہے اور احسان اللہ کیانی ڈاٹ کام کے نام سے ایک ویب سائٹ بنا لی ہے۔

 

احسان اللہ کیانی کی ویب سائٹ کے مقاصد:

 

یہ ویب سائٹ باقی ویب سائٹوں سے مختلف ہو گی

 

میں نے اس ویب سائٹ کی ابتداء کے ساتھ ہی قرآن کریم کی سب سے بڑی تفسیر لکھنے کا آغاز کر دیا ہے۔

 

ہر چند دن بعد آپ کو اس کی ایک قسط پڑھنے کو مل جایا کرے گی۔

 

بس دعا کیجیے اللہ تعالی مجھے استقامت دے اور اس کام کو مجھ سے کروانے کے اسباب پیدا فرما دے۔

 


آپ کی دعاؤں کا طلب گار
احسان اللہ کیانی

قرآن کریم کی سب سے بڑی تفسیر کا مطالعہ کرنے کیلئے یہاں کلک کریں۔

نوٹ:

 احسان اللہ کیانی نے اپنے یوٹیوب چینل پر بھی دوبارہ سے کام شروع کر دیا ہے،وہ آج کل وہاں اسلامی کتب کا تعارف کروا رہے ہیں ۔

یو ٹیوب چینل دیکھنے کیلئے یہاں کلک کریں ۔