یہود و نصاری آپس میں دوست ہیں یا دشمن ؟

یہود و نصاری آپس میں دوست ہیں یا دشمن ؟

سوال:

یہود و نصاری آپس میں دوست ہیں یا دشمن؟

جواب:

یہودی و نصاری آپس میں دشمن ہیں،ان کی دشمنی بہت پرانی ہے،یہودی پہلے سے دنیا میں موجود تھے، انہوں نے ہی حضرت عیسی علیہ السلام کی والدہ پر زنا کی تہمت لگائی تھی، انہوں نے ہی حضرت عیسی علیہ السلام کو نبی تسلیم نہیں کیا تھا، وہ کہتے تھے یہ سچے نبی نہیں ہیں بلکہ جھوٹے اور فریبی ہیں، حضرت عیسی علیہ السلام پر جو لوگ سب سے پہلے ایمان لائے، ان پر ظلم و ستم بھی یہود ہی نے کیا تھا، عیسائی عقیدے کے مطابق حضرت عیسی علیہ السلام کو یہودیوں نے ہی قتل کیا تھا۔

 

عیسائیوں کی یہودیوں سے نفرت:

عیسائی بھی یہودیوں سے بہت نفرت کرتے ہیں،ہیکل سلیمانی جو یہودیوں کی مقدس ترین جگہ ہے،اس کو ایک رومی جرنل طیطش یا ٹائیٹس نے مسمار کیا تھا، یہ غالبا پچاس یا ستر عیسوی کا واقع ہے، اس کے بعد ہیکل سلیمانی آج تک دوبارہ تعمیر نہیں ہوسکا، حضرت عمر رضی اللہ عنہ نے جب بیت المقدس فتح کیا ،اس وقت وہاں کے عیسائیوں نے ہی یہ شرط رکھی تھی کہ ہم ہتھیار ڈال رہے ہیں، آپ کو جزیہ دیا کریں گے، بس ہماری ایک شرط ہے کہ آپ یہودیوں کو یہاں آباد ہونے کی اجازت نہیں دیں گے، حضرت عمر رضی اللہ عنہ نے یہ شرط تسلیم کر لی، اسی معاہدے کی وجہ سے سلطان عبد الحمید خان یہودیوں کو یہاں آباد ہونے کی اجازت نہیں دیتے تھے۔

 

البتہ قرآن کریم کے مطابق یہود و نصاری مسلمانوں کے خلاف متحد اور دوست ہوتے ہیں ۔

از

احسان اللہ کیانی

 

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے