سوال :

کشمیر،برما اور فلسطین کی حفاظت کے متعلق شریعت کیا کہتی ہے؟

جواب:

شریعت کہتی ہے ان کی حفاظت ساتھ والے ممالک کریں،ان میں اتنی طاقت نہ ہو تو دیگر قریب کے ممالک بھی مدد کریں ،ان کی طاقت بھی کم ہو تو پوری دنیا کے مسلمان ممالک ان کی حفاظت کے لیے متحد ہو جائیں ۔

اس حوالے سے فتاوی شامی میں ہے:

اگر کفار کسی شھر پر ہجوم کریں تو وہاں والے مقابلہ کریں اور ان میں اتنی طاقت نہ ہو

تو وہاں سے قریب والے مسلمان مدد کریں اور ان کی طاقت سے بھی باہر ہو تو جو ان سے قریب ہیں ،وہ بھی شریک ہوجائیں وعلیٰ ہذا القیاس۔

(درمختار، ردالمحتار)

یعنی اگر ضرورت ھو، تو پوری دنیا کے مسلمان ایک مسلمان شھر کو بچانے کے لیے جمع ھو جائیں

فتاوی شامی بریلوی دیوبندی دونوں علماء کے نزدیک معتبر کتاب ہے ،یہ بات بریلوی عالم کی کتاب بہار شریعت میں بھی اسی طرح لکھی ہوئی ہے ۔

از

احسان اللہ کیانی

1 thought on “سوال : کشمیر،برما اور فلسطین کی حفاظت کے متعلق شریعت کیا کہتی ہے؟

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے